یادداشت

زیادہ دیکھے گئے موضوعات

ہم سے تعاون کریں

تیل کے شعبے میں آل سعود کی غداری جاری


تیل کے شعبے میں آل سعود کی غداری جاری

( ۰ Votes ) 

grey تیل کے شعبے میں آل سعود کی غداری جاری

ایران کی شرکت پر سعودی عرب کی تاکید کی وجہ سے ناکام ہو گیا اور اجلاس میں شریک سولہ ملک ، سعودی عرب کی خلاف ورزیوں کی وجہ سے کچھ نہیں کر پائے ۔
ویسے بڑی عجیب بات یہ رہی کہ سعودی عرب جو ہر میدان اور ہر شعبے سے ایران کو باہر نکالنے کے لئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہا ہے ، اچانک ایران سے اظہار محبت کرنے لگا اور یہ کہنے لگا کہ ایران کے بغیر دحہ اجلاس کا مطلب ہی نہیں ! در اصل ایران کے خلاف پابندیوں کے گذشتہ برسوں کے دوران سعودی عرب نے ایران کے تیل کے بازار پر بھی قبضہ کرکے ، اربوں ڈالر کا فائدہ حاصل کیا ہے لیکن اب جبکہ پابندیوں کا خاتمہ ہو گیا ہے تو حماقت آمیز انداز میں سعودی حکام ، ایران کو پابندیوں کے دائرے میں ہی رکھنا چاہ رہے ہیں اور اس کے لئے ایران کی رضامندی حاصل کرنے کی بھی کوشش کر رہے ہیں ۔
بہرحال ، تیل کی پیداوار ” فریز” کرنے کی تجویز بھی آل سعود کی مکاریوں کی وجہ سے ناکام ہو گئی ہے ۔ در اصل سعودی عرب ، ایران کے خلاف پابندیوں کے خاتمے کے بعد اب دوسرے طریقوں سے ایران کو معاشی طور پر نقصان پہنچانے کی کوشش کر رہا ہے لیکن اس کا نتیجہ بھی ناکامی کے علاوہ کچھ نہیں ہوگا ۔
اوپک میں سعودی عرب کی پالیسیوں سے ہر ملک نالان ہے  اور یہ ناراضگی کسی وقت بھی واضح مخالفت کی شکل میں نظر آ سکتی ہے ۔ تیل کی قیمت میں جو گراوٹ آئی ہے اس کی ساری ذمہ داری سعودی عرب کی ہے اور اس کا علم خود سعودی حکام کو بھی ہے اسی لئے وہ مختلف حیلوں سے اس پر پردہ ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

تبصرہ شامل کریں











grey تیل کے شعبے میں آل سعود کی غداری جاری
ریفرش


sharethis تیل کے شعبے میں آل سعود کی غداری جاری

جواب ارسال کریں

آپ کا ای میل (نشر نہیں کیاجاٗے گا).
لازمی پر کرنے والے خانوں میں * کی علامت لگا دی گئی ہے.

*


هفت × = 14

رابطہ کیجیے | RSS |نقشہ سائٹ

اس سائٹ اسلام ۱۴ کے جملہ حقوق محفوظ ہیں،حوالے کے ہمراہ استفادہ بلامانع ہے