یادداشت

زیادہ دیکھے گئے موضوعات

ہم سے تعاون کریں

برطانیہ سے ہر ہفتے ایک لڑکی بطور سیکس ورکر شام جار رہی ہے


برطانیہ سے ہر ہفتے ایک لڑکی بطور سیکس ورکر شام جار رہی ہے

( ۰ Votes ) 

grey برطانیہ سے ہر ہفتے ایک لڑکی بطور سیکس ورکر شام جار رہی ہے

 

اطلاعات کے مطابق ہر ہفتے کم از کم ایک برطانوی خاتون یا لڑکی برطانیہ سے سیکس ورکر کے طور پر داعش کی جنسی تسکین کے مقصد سے شام چلی جاتی ہے۔ اس بات کا انکشاف برطانیہ میں انسداد دہشت گردی فورس کے سینئر افسر ڈپٹی اسسٹنٹ کمشنر ہیلن بال نے کیا- ہیلن بال کی انتہائی احتیاط کے ساتھ تیار کردہ رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال کے دوران کم از کم ۶۰ سیکس ورکر برطانیہ سے شام گئیں۔ میٹروپولیٹن پولیس کے انسداد دہشت گردی سے متعلق امور کے کوآرڈی نیٹر نے بتایا کہ گزشتہ سال برطانیہ سے شام جانے والی خواتین میں ۲۲نوجوان تھیں جن میں ۱۸-۲۰سال سے کم عمر لڑکیاں شامل تھیں جبکہ شام جانے والی آخری ۴لڑکیوں کی عمر ۱۵-۱۶ سال تھی۔ انہوں نے یہ انکشاف نئی نگراں فوٹیج سامنے آنے کے بعد کیا ہے جس میں غالباً اسکول کی ۳لڑکیوں کو شام جاتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں ان تینوں لڑکیوں کو ترکی کے شہر استنبول میں ایک بس اسٹینڈ کے قریب سے جاتا دکھایا گیا ہے- اس رپورٹ کے منظر عام پر آنے کے بعد یہ بات بالکل واضح ہوگئی ہے کہ شام میں صدر بشار اسد کی حکومت کا تختہ الٹنے اور وہاں ایک اسرائیل نواز حکومت کو اقتدار میں لانے کی سازش رچنے والے مغربی ممالک خصوصا برطانیہ نہایت منظم طریقے سے نہ صرف برطانوی دہشت گردوں کو شام بھیجے جانے میں دخیل ہے بلکہ مسلم گھرانوں کی خواتین اور بچیوں کو بھی ایک سازش کے تحت شام جانے کی چھوٹ دے رکھی ہے- برطانیہ میں مقیم مسلمان کمیونیٹی سے تعلق رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں برطانیہ میں اسلامی مراکز اور علما خاموشی معنی خیز ہے- ان لوگوں کا کہنا ہے کہ ایک گہری سازش کے ذریعے مسلمان گھرانوں کی بچیوں کو اسلام کے نام سیکس ورکر بنایا جارہا ہے-

تبصرہ شامل کریں











grey برطانیہ سے ہر ہفتے ایک لڑکی بطور سیکس ورکر شام جار رہی ہے
ریفرش


sharethis برطانیہ سے ہر ہفتے ایک لڑکی بطور سیکس ورکر شام جار رہی ہے

جواب ارسال کریں

آپ کا ای میل (نشر نہیں کیاجاٗے گا).
لازمی پر کرنے والے خانوں میں * کی علامت لگا دی گئی ہے.

*


− 9 = هیچ

رابطہ کیجیے | RSS |نقشہ سائٹ

اس سائٹ اسلام ۱۴ کے جملہ حقوق محفوظ ہیں،حوالے کے ہمراہ استفادہ بلامانع ہے